فلسطین لہو لہواورفادی ابوصالح شہید کی جرات کوسلام۔۔۔راشد علی

نہ کوئی دنیا کی حقیقتوں کو جانتا ہے اور نہ ہی اپنے ارد گرد بکھر تی قوموں اور تباہ ہوتی ہوئی قوتوں کو دیکھتا ہے۔عذاب کے فیصلوں اور اللہ کی جانب سے نصرت کے مظاہروں کو دیکھنے کیلئے کسی تاریخ کی کتاب کھولنے یا عاد و ثمود کی بستیوں کا مطالعہ کرنے کی ضرورت نہیں،یہ ابھی کل کی باتیں ہیںکہ خدائی دعوئے کرنے والے کس طرح برباد ہوئے سویت یونین کی بدترین تباہی کے بعد امریکہ نے مسلم دنیا کو ہانکنا شروع کیا اس سے ماقبل یہ بے لگاگھوڑا دنیا کے 38ممالک سے ذلیل ورسوا ہوکر بھاگ چکا تھا جن میں فلپائن ،کوریا ،چین ،ویت نام،جنوبی امریکہ شامل تھے 9/11کے بعد اسرائیل نے منصوبہ بندی کے تحت امریکہ کو مسلم دشمنی کے لیے استعمال کیا اورامریکہ پوری وفاداری کے ساتھ اپنے ٹاسک کی جانب بڑھتا گیا اورمسلم حکمرانوںنے بزدلی کی اعلیٰ امثال قائم کرتے ہوے مسلم ہیروز کی بہادری جرات پر پانی پھیر دیا اوربزدلی کے تمغے اپنے سینے پر سجائے اہل اسلام کی نسل کشی میں برابر کے شریک رہے اور ابھی تک اسی جرم میں اپنی زبان اور ہاتھ نگ رہے ہیں کوئی ان میں خالد بن ولید ؓجیسا نڈر اورجناب سیدنا علی ؓ جیسا بہادر اورٹیپوسلطان جیسا غیرت مند صلاح الدین ایوبی جیسا کمانڈر نہیں ہے جو صہونیوں کو ان کی اوقات یاد کروائے ان کو وہ ماضی یاد کروائے جب جناب عمر رضی اللہ عنہ نے اہل یہود کو سرزمین حجاز سے بے دخل کردیا تھا اللہ تعالیٰ نے یہودیوں کو مبغوض قوم قرار دیا یہ انتہائی سفاک ہٹ دھرم بے ایمان اورانبیاءکی استہزا کرنے والی قوم ہے غداری اور دھوکے میں انکا کوئی ثانی نہیں ہے عیسائیوں کے مشہور مذہبی رہنما مارٹن لوتھر (۳۵۴۱ء۔۶۴۵۱)نے یہودیوں کو خلق کی راندی ہوئی اورخدا کی دھتکاری ہوئی قوم قرار دیا اور اپنی کتاب (The Jews and The Cross)میں مزید کہا کہ ان کی عبادت گاہوں کو جلادو ، اور ان کی جو چیز جل نہ سکے اس پر مٹی ڈال دو یا توڑ پھوڑ کر مٹی میں ملادو تاکہ اس کا کسی کو نشان بھی نظر نہ آئے ان کے مکانوں کو مسمار کر کے ملبہ بکھیر دو انہیں ایک چھت کے نیچے یا کسی اصطبل میں جمع کرلو اور انہیں وہیں رکھو تاکہ وہ اذیت و مصیبت میں گرفتار رہیں اور ان کے دماغوں سے نکل جائے کہ وہ اس سرزمین کے آقا ہیں ۔ وہ خدا کے آگے روتے رہیں ان کی وہ مذہبی کتابیں جلادو جن کے ذریعے وہ اپنے باطل مذہب کا پرچار کرتے ہیں ان کے مذہبی پیشوا¶ں سے کہہ دو کہ انہوں نے اپنے مذہب کا کہیں وعظ کیا تو انہیں قتل کر دیا جائے گا ۔مارٹن کا مذکورہ وعظ ان کے سفاکیت اورانسان دشمن کو ظاہر کرتا ہے تبھی تو ہولوکاسٹ رونما ہوا ہٹلر انہیں لعنت زدہ نسل خیال کرتا تھا یہ قوم ہمیشہ سے ہی امن کی راہ میں سب سے بڑی رکاوٹ ثابت ہوئی زمین پر فساد کے تانے بانے انہیں سے ملتے ہیں زمین پر فساد کی ڈور انہیں کے ہاتھ میں ہے یہ ظلم کے خوگر اورامن وآشتی کے دشمن ہیں مسلمانوں نے ہمیشہ بحثیت انسان ہمیشہ ان کے لیے اپنے دل میں نرم گوشہ رکھا مگر ہر مرتبہ انہوں نے مسلمانوں کی پیٹھ میں چھرا گھونپا مسلمانوں نے انہیں مراعات دیں بدلے میں یہودیوں نے مسلمانوں کو اذیت دی اورمسلمانوں عورتوں پر دست درازی کے مرتکب ہوئے تاریخ میں ایسے متعدد واقعات موجود ہیں ایک بار مدینہ میں تین یہودی دکاندار وں نے ایک مسلمان لڑکی کو بازار میں پکڑ لیا اور اس کے کپڑے پھاڑ کر اس کے ارد گرد ناچنے اور فحش گانے گانے لگے ۔ مسلمان یہودیوں پر ٹوٹ پڑے ۔ مدینہ میں مسلمانوں اور یہودیوں میں خونریز فساد ہو ا ۔ رسول اکرم صلی اللہ علیہ و آلیہ وسلم نے یہودیوں کے ایک مذہبی پیشوا کعب بن الاشرف کو گر فتار کر اکے سزا ئے موت دے دی کیو نکہ مسلمانوں کے خلاف یہودیوں کی تو ہین آمیز اور خطرناک کارروائیوں کی ہدایت کاری یہی شخص کر تاتھاان اسرائیلیوں نے مسلمانوں کے دشمن قریش کو جنہوں نے رسول خدا کے قتل کی قسم کھائی تھی ، تمام راز دئیے اور قریش کو یہ بھی بتا یا کہ جنگ میں مسلمانوں کی کتنی نفر ی آ رہی ہے یہودی بظاہر مسلمانوں کے دوست بنے رہے لیکن تمام راز بُت پر ستوں کو پہنچاتے رہے یہودیوں نے رسول اکرم کو قتل کی بھی سازش کی معرکہ خیبرکی فتح کے موقعہ پر ایک یہودی عورت نے رسول اللہ کو عقیدت کے دھوکے میں اپنے گھر کھانے پر مدعو کیا اور کھانے میں زہر ملادیا رسالت مآب بیماری کی حالت میں ام بشر البارا سے کہا میں آج بھی اپنے جسم میں اسی زہر کا اثر محسوس کر رہا ہوں جو میں نے منہ میں ڈال کر اگل دیا تھا اس میں کسی شک و شبہ کی گنجائش نہیں کہ رسول اللہ کی آخری بیماری کا باعث اسی زہر کا اثر تھا۔یہودیوں نے ہمیشہ محبت کا دھوکہ دے کر انتقام کا آگ بھڑکائی ہے غداری اوردھوکہ بازی میں کوئی ان سے آگے نہیں ہے یہ پیسوں کا جھانسا دے کر غیرت خریدتے ہیں بے غیرتی فحاشی عریانی کے یہی علمبردار ہیں دنیا کے بااثر ممالک پر ان کا اثرورسوخ ہے سودی بنکاری نظام پر یہودی قابض ہیں سائنس اورٹیکنالوجی کے میدان میں یہ سب سے آگے ہیں امریکہ اوراور اس کے اتحادی اسرائیل کو گریٹر اسرائیل بنانا چاہتے ہیں بیت المقدس میں امریکی سفارت خانے کی منتقلی اس منصوبے کی طر ف پہلا بڑاقدم ہے عربی نشریاتی ادارے الجزیرہ کی رپورٹ کے مطابق اسرائیلی سرحد سے ملحقہ علاقے غزہ پٹی پر امریکی سفارتخانے کی بیت المقدس منتقلی اور افتتاح کے خلاف فلسطینی احتجاج کر رہے تھے کہ اسرائیلی فوج کی جانب سے ان پر فائرنگ کی گئی اور آنسو گیس کے شیل فائر کیے گئے جس کے نتیجے میں اب تک 55فلسطینی شہید اور2700سے زیادہ زخمی ہو چکے ہیںشہید زخمی ہونے والوں میں 74 بچے، 23 خواتین اور 8 صحافی شامل ہیںاورشہید ہونے والوں فلسطینیوں میںایک نوجوان فادی ابوالصالح بھی شامل تھا جو دونوں ٹانگوں سے معذور تھا اور غلیل ہاتھ میں تھامے اسرائیلی بربریت کے خلاف نبرد آزماتھا جسے اسرائیلی فوج نے شہید کردیا فادی ابوالصالح رحمہ اللہ کی شہادت رائیگاں نہیں جائے گی کیونکہ شہید کی جوموت ہے وہ قوم کی حیات ہے فادی ابوالصالح کی بہادری بزدل مسلم حکمرانوں کے لیے بہترین سبق ہے اگر وہ سیکھنا اوریاد کرنا چاہیں اوراس میں سبق ہے ان نظریاتی حکمرانوں کے لیے جو بھارت میں ہلاک ہوئے 150جانوں کا رونا رو رہے ہیں اورماں دھرتی پر الزام تراشیاں کررہے ہیں انہیں لاکھوںکشمیر ی شہید اورسات لاکھ شامی شہید ہزاروں فلسطینی شہید لاکھوں افغانی شہید،برما کے لاکھوںمسلم شہید کیوں نظر نہیں آتے کیا آنکھیں حقائق نہیں دیکھتیں ؟کیا سماعتیں سسکیوں اورآہوں کا پتا نہیں دیتیں ؟کیا مسلم خواتین کی آبرریزی سینہ چاک نہیں کرتی ؟کیوں اپنے گھر میں ہی آگ لگانے کی جستجو کی جارہی ہے قوم سوال پوچھتی ہے ؟ یہ بیانیہ ایسے وقت کیوں دیا جارہا ہے ؟ وضاحت تو بنتی ہے ۔ایک مطلع شہداءکے نام
جب تک نہ جلے دیپ شہیدوں کے لہو سے
سنتے ہیں کہ جنت میں چراغاں نہیں ہوتا

اپنا تبصرہ بھیجیں